2010/12/13

ذوق والوں کے نام : اردو بلاگنگ کے پانچ (5) سال

السلام علیکم ورحمۃ اللہ ، محترم قارئین !

اردو بلاگنگ کے منظرِ عام پر آج راقم کی اس پوسٹ کے ساتھ 5 سال مکمل ہو رہے ہیں۔
پانچ سال قبل آج ہی کے دن ، یعنی 13-ڈسمبر-2005ء کو جب میں نے بلاگ اسپاٹ پر اپنا بلاگ قائم کیا تھا تو آج کی بہ نسبت نہایت ہی کم بلاگز اردو بلاگنگ کے میدان میں موجود تھے ، خاص طور پر بلاگ اسپاٹ یعنی بلاگر ڈاٹ کام پر تو گنے چنے اردو بلاگ نظر آتے تھے۔

خود میں نے جب اپنا یہ بلاگ، بلاگ اسپاٹ پر قائم کیا تھا تو نہ اُس وقت مجھے بلاگنگ کی الف بے کا علم تھا، نہ بلاگ تھیمز کو سمجھنا آتا تھا اور نہ ہی اردو یونیکوڈ تحریر سے کوئی خاص شناسائی حاصل تھی۔ کسی جگہ جناب امانت علی گوہر کا آن لائن اردو پیڈ مل گیا تھا تو وہیں اردو یونیکوڈ میں لکھنے کی مشق ہو جایا کرتی تھی۔
ویسے اردو کی انٹرنیٹ کمیونیٹی میں فورمز کے حوالے سے غالباً 2003ء کے اوائل میں میرا داخلہ ہوا تھا۔ دو سال تک تصویری اردو اور رومن اردو کے فورمز میں سیکھنا سکھانا چلتا رہا پھر یونیکوڈ اردو کے سب سے پہلے اور سب سے بڑے فورم اردو محفل سے آشنائی ہوئی اور گویا اردو یونیکوڈ کے حوالے سے ایک نئے ہوشربا جہاں کا در وا ہو گیا۔

فورمز یا فیس بک جیسی سوشل نیٹ ورکنگ سائیٹس سے جہاں اکثر اوقات غیرضروری تنازعات یا بےتکے و بےجا مباحث سے وقت کا زیاں ہے تو اس کے مقابلے میں "بلاگ" کو کسی حد تک بہتر اس لیے کہا جا سکتا ہے کہ علم کی اشاعت و توسیع اور مہذب تبادلۂ خیال میں اس پلاٹ فارم کا استعمال نسبتاً آسان ، فائدہ مند اور خودمختار حیثیت کا حامل ہے۔ (یہ الگ بات ہے کہ کچھ سادہ لوح بلاگران اس سنجیدہ پلاٹ فارم کو بھی عمومی گپ شپ کی بیٹھک کی طرح استعمال کر جاتے ہیں)۔

چونکہ 2005ء کے اختتامی مہینہ میں ، میں نے بلاگنگ کی شروعات کی تھی لہذا اس سال کی صرف ایک تحریر بلاگ پر موجود ہے۔ جبکہ ۔۔۔ 2006ء میں [8] مراسلات ، 2007ء میں [14] ، 2008ء میں [16] ، 2009ء میں [25] اور 2010ء میں تادمِ تحریر [12] مراسلات کی اشاعت اس بلاگ پر عمل میں آئی ہے۔
تحریروں کے اس قدر کم تناسب کا مطلب صرف اس قدر سمجھئے کہ اس سے 10 تا 20 گنا مضامین جو میں نے تقریباً ہر سال تحریر کئے وہ زیادہ تر فورمز پر ہی پوسٹ ہوتے رہے۔ اب میری کوشش ہے کہ مختلف و متنوع موضوعات پر مبنی ان تحاریر کو علیحدہ علیحدہ موضوعاتی بلاگز کے حوالے سے پیش کروں۔

اردو کمیونیٹی میں موضوعاتی بلاگز کی ویسے بھی کچھ کمی سی نظر آتی ہے۔ اسی سبب میں نے تین مختلف موضوعات پر الگ الگ بلاگ تخلیق کئے تھے ، یعنی :
"حجیت حدیث" کے موضوع پر بھی بہت سارے مختلف فورمز پر انگریزی اور اردو میں میرے مباحث موجود ہیں۔ فی الحال کوشش ہے کہ جلد سے جلد اس موضوع پر علیحدہ اردو بلاگ قائم کیا جائے۔ اس کے لیے یقیناً کچھ مزید محنت کی ضرورت پڑے گی کیونکہ اب رب العزت کی عنایت و کرم سے عربی میں حدیث کا ہر مجموعہ اور ہر قدیم سے قدیم عربی کتاب پورے تحقیقی حوالوں کے ساتھ آن لائن آ چکی ہے۔ اس طرح کسی حدیث یا کسی عربی عبارت کا آن لائن حوالہ دینے میں الحمدللہ اب کوئی مشکل درپیش نہیں ہے۔

آخری بات :
مغرب کی تکنالوجی اور اس کی اخلاقی خوبیوں کے اعتراف میں کوئی باک نہیں مگر اس کی ایک خرابی کا ذکر کئے بغیر بھی چارہ نہیں۔
اپنی عمر سے بڑے یا عمررسیدہ افراد کی جو عزت و تکریم تمام ممالک کے مسلم معاشروں میں کی جاتی رہی ہے ، اس کی حقیقی وجوہات کا پتا شائد مادیت پرستی ، مساویانہ حقوق اور تیزرفتار تکنالوجی کے زعم میں مبتلا مغرب لگا نہ سکے ۔۔۔۔ مگر ہمارے ہاں اسوۂ حسنہ موجود ہے ۔۔۔۔ ملاحظہ فرمائیں :
بڑوں کو پہلے بات کرنے کا موقع دینے والے ایک واقعے کا ذکر کرتے ہوئے امام بخاری علیہ الرحمۃ نے اس حدیث (‏"‏ كبر الكبر ‏") کو جس باب کے تحت بیان کیا ہے ، اس باب کے عنوان میں لکھا :
باب اکرام الکبیر (جو عمر میں بڑا ہو اس کی تعظیم کرنا)
صحیح بخاری ، کتاب الادب
اسی طرح ایک اور حدیث کا مفہوم ہے کہ : وہ شخص ہم میں سے نہیں جو ہمارے بڑوں کے حقِ بزرگی کو نہ پہچانے۔
ابوداؤد (صحیح) ، ترمذی (حسن)

اور شعب الایمان للبیھقی میں حسن سند سے ایک روایت یوں ہے کہ :
إِنَّ مِنْ إِكْرَامِ جَلالِ اللَّهِ ، إِكْرَامُ ذِي الشَّيْبَةِ الْمُسْلِمِ
معمر مسلمان کا اکرام کرنا اللہ تعالیٰ کی تعظیم کا حصہ ہے
شعب الایمان للبیھقی

اس موضوع پر ڈاکٹر طاہر القادری نے "اسلام میں عمر رسیدہ اور معذور افراد کے حقوق" کے عنوان سے ایک اچھی کتاب تحریر کی ہے، جس کا آن لائن مطالعہ یہاں کیا جا سکتا ہے (گو کہ اس میں درج کافی روایات نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے صحیح طور ثابت نہیں ہیں۔)

اختلاف یا مبحث کوئی خراب بات نہیں ، لیکن اس کی آڑ میں دانستہ یا نادانستہ اپنے بڑوں کو بلاوجہ یا غیرضروری طور پر نشانہ بنانے سے نہ صرف ہم اسوۂ حسنہ سے دور ہوتے ہیں بلکہ انجانے میں اپنے والدین ، اساتذہ اور خاندانی ماحول کی رسوائی کا سبب بھی بن جاتے ہیں۔

عمرِ عزیز کی چار دہائیوں پر محیط موسموں کو برت چکنے پر میرا خیال ہے کہ اپنے ساتھی نوجوان بلاگران کو کم از کم اتنی نصیحت کا حق مجھے حاصل ہے۔

میں اپنے قارئین ، دوست احباب ، ناصح و خیر خواہ اور عدم خوش گمانی رکھنے والوں کا دلی شکرگزار ہوں کہ ان کی تعریف و تنقید و حوصلہ افزائیوں کے سبب تحقیق اور مطالعہ کی امنگ کا سفر مسلسل ارتقاء میں ہے۔
والسلام علیکم۔

16 comments:

  1. ما شاء اللہ جناب اللہ کرے روزِ قلم اور زیادہ ہو..

    مبارک باد قبول فرمائیں اور یہ سفر بالضرور جاری رکھیں..

    ReplyDelete
  2. پانچ سال مکمل ہونے پر جناب بہت بہت مبارک ہو اپ کو!!۔

    ReplyDelete
  3. "حجیت حدیث" کے موضوع پر آپ کے اردو بلاگ کا انتظار رہے گا۔

    ReplyDelete
  4. السلام علیکم ہماری طرف سے بھی بہت بہت مبارک ہو جناب

    ReplyDelete
  5. اسلام علیکم
    بہت مبارک ہو جی

    ReplyDelete
  6. اسلام علیکم
    مبارک ہو آپکو بہت بہت اور آپکے منتخب کردہ موضوعات نہایت دلفریب اور مفید ہیں۔ اللہ آپکے قلم میں مزید طاقت عطا فرمائے

    ReplyDelete
  7. ابراراحسین12/14/2010 7:05 AM

    اسلام علیکم
    بہت بہت مبارک ہو،آپ کا بلاگ حقیقت میں علمی اثاثہ ہے۔ اور بہت سی نئی اور مستند معلومات یہاں سے حاصل ہوتی ہیں

    ReplyDelete
  8. آپ کو مبارک ہو محترم

    ReplyDelete
  9. السلام علیکم۔ تمام مبصرین کا شکرگزار ہوں کہ انہوں نے تبصرہ کے لیے وقت نکالا۔

    مکی : بہت شکریہ۔ ان شاءاللہ بقدر ہمت و استطاعت سفر جاری رہے گا۔
    شعیب صفدر : بہت بہت شکریہ شعیب صفدر صاحب۔
    احمد عرفان شفقت : دعا کیجئے کہ "حجیت حدیث" بلاگ کی شروعات جلد ہو سکے۔
    الف نظامی : شکراً اخی العزیز
    خرم ابن شبیر : مبارکباد کے لیے بہت بہت شکریہ۔
    یاسر خوامخواہ جاپانی : شکریہ جناب۔
    ایم۔اے۔امین : بلاگ پر تشریف آوری اور مبارکباد کیلیے آپ کا مشکور ہوں۔ آپ کے بلاگ (بیادِ سڈنی) کا علم مجھے ابھی ابھی ہوا ہے۔ اس کا مطالعہ کر رہا ہوں۔ بہت مفید تحاریر ہیں ماشاءاللہ۔
    ابرار حسین : تعریف کے لیے آپ کا مشکور ہوں۔ اگر عربی کے مفید علمی بلاگز پر نظر دوڑائی جائے تو پھر میرا بلاگ ان کے مقابلے میں حقیقتاً کچھ بھی نہیں۔
    محمد وارث : شکریہ وارث صاحب۔

    ReplyDelete
  10. تمام باذوق افراد کو پانچ سال مکمل ہونے کی خوشی میں بہت بہت مبارک ہو ۔۔۔ میں بھی اپنے پرانے بلاگ کو دیکھتی ہوں ۔ کہ مجھے کتنا وقت ہو چلا ۔ ویسے وقت اتنی تیزی سے گزر رہا ہے ۔۔۔

    ReplyDelete
  11. جزاک اللہ محترم باذوق بھائی
    اللہ آپ کو ہمیشہ دین کے کام میں ترقی فرمائے اور آپ کی دینی کاوشوں کو زخیرہ آحرت بنائے۔ آمین
    بہت معزت کہ کچھ عرصے کے بعد بلاگ کی دینا میں دوبارہ قدم رکھا ہے۔
    امید کہ اب سلسلہ جاری و ساری رہے گا۔ ان شاءاللہ

    ReplyDelete
  12. السلام علیکم،
    باذوق بھائی، اللہ تعالیٰ آپ کو ہمت اور توفیق عطا فرمائے اور آپ کے کاموں میں برکت دے۔
    آپ کی تحریروں سے متاثر ہو کر یونی کوڈ کی دنیا میں میری آمد ہوئی تھی جو کم و بیش چار سال پر محیط ہو چکی ہے۔

    ReplyDelete
  13. السلام و علیکم
    ۵ سال مکمل ہونے پر مبارکباد قبول کیجئے۔
    اللہ آپ کے علم وقلم میں اور قوت عطا فرمائے۔
    آمین، ثم آمین

    ReplyDelete
  14. مبارک باد قبول کیجئے بھائی باذوق


    کاش کوئی زبان عربی سکھانے پر بھی ابتدائی سے ایڈوانس کورس کروائے بلاگنگ پر
    اور اس کے لئے ایک بلاگ ہی نہیں سب وہ بلاگرز جو عربی بولتے سمجھتے اور سمجھا سکتے ہیں مل کر اسباق پیش کریں
    ساتھ ہی قرآن کا درس اور احادیث کی تشریح
    و تفسیر کروائیں

    جس پرجامع صحیح بخاری و مسلم اور دیگر صححہ ستہ کی کتب کو جمع کیا جا سکے
    کام جامع ہے پر مل کر آسان کیا جا سکتا ہے

    ReplyDelete